88

وفاقی وزیر اینٹی نارکوٹکس علی محمد مہر زخمی

کراچی کے علاقے گزری میں گھر میں ڈکیتی واردات کے دوران  وفاقی وزیر اینٹی نارکوٹکس اور سابق وزیر اعلیٰ سندھ علی محمد مہر زخمی ہوگئے۔

ایس ایس پی ساؤتھ کا کہنا ہے کہ سابق وزیر اعلیٰ سندھ علی محمد مہر کو ڈیفنس میں نجی اسپتال منتقل کر دیا گیا ہے جہاں ان کی حالت خطرے سے باہر ہے۔ علی محمد مہر کے زخمی ہونے سے متعلق متضاد اطلاعات ہیں کہ انہیں پستول کا بٹ مارا گیا ہے۔

ذرائع کا بتانا ہے کہ ملزمان کی جانب سے لوٹ مار کے وقت علی محمد مہر اور ان کے گھریلو ملازمین کی جانب سے مزاحمت کی گئی جس کی وجہ سے انہیں پستول کا بٹ مارا گیا ہے۔

ترجمان آئی جی سندھ کے مطابق آئی جی سندھ نے وفاقی وزیر اینٹی نارکوٹکس علی محمد مہر کے زخمی ہونے کے واقعے پر رپورٹ طلب کر لی۔ ترجمان کا کہنا ہے کہ ڈی آئی جی ساؤتھ سے انکوائری اور ملزمان کی گرفتاری سے متعلق اقدامات کی رپورٹ طلب کی ہے۔ پی ٹی آئی رہنما حلیم عادل شیخ واقعہ کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ سندھ میں وفاقی وزیر بھی محفوظ نہیں رہے۔

حلیم عادل شیخ نے سندھ حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ امن امان کی خراب صورتحال پر وزیراعلیٰ مراد علی شاہ کا منہ نہیں کھلتا۔شہر میں بڑھتے ہوئے واقعات افسوسناک ہیں۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ واقعے کی تمام پہلووں سے تفتیش کی جائے، واقعے میں ملوث افراد کو جلد گرفتار کیا جائے۔

Facebook Comments

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں