57

پاکستان کی معیشت پر آئی ایم ایف کی نئی رپورٹ جاری

عالمی مالیاتی ادارے آئی ایم ایف کے مطابق پاکستان کو اپنی معیشت کی بہتری کے لئے پچیس ارب ڈالرز کی ضرورت ہے، پاکستان کو آئندہ ماہ بجلی کے ریٹس ڈھائی روپے فی یونٹ بڑھانا ہوں گے۔

پاکستان کی معیشت پر آئی ایم ایف نے نئی رپورٹ جاری کر دی جس کے مطابق پارلیمنٹ کو بتایا گیا کہ 516 ارب روپے کے ٹیکس لگائے گئے ہیں جو حقیقت میں 733 ارب 50 کروڑ روپے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق بجلی کی قیمت کا نیا ٹیرف اگست 2019 میں جاری کیا جائے گا،نیپرا 2020 کے بجلی ٹیرف کا اعلان ستمبر 2019 میں طے کرے گا،نیپرا کی خود مختاری کا بل دسمبر 2019 میں پارلیمنٹ میں پیش کیا جائے گا۔

پاکستان گیس سیکٹر کے واجبات کی وصولی یقینی بنائے گا،گیس واجبات کی وصولی کا پلان ستمبر 2019 میں پیش کیا جائے گا ،اوگرا کی خود مختاری کا ترمیمی بل پارلیمنٹ میں پیش کیا جائے گا۔

آئی ایم ایف کا کہنا ہے کہ ٹیکس مراعات اور چھوٹ ختم کرنے، رئیل اسٹیٹ سیکٹر او زرعی آمدن پر ٹیکس لگانے کی یقین دہانی کرائی گئی ہے۔پاکستان کو ایف اے ٹی ایف کے ستائیس نکات پر عمل درآمد یقینی بنانا ہوگا۔

آئی ایم ایف کے مطابق مئی سے کرنسی کی شرح تبادلہ مارکیٹ طے کر رہی ہے لیکن اسٹیٹ بینک اسے ماننے کو تیار نہیں،آئی ایم ایف کا پیکیج مکمل ہونے تک پاکستان کوئی اسکیم نہیں لاسکے گا،پاکستان کوستمبرتک 1 ہزار ارب روپے کے ٹیکسزجمع کرنے ہونگے۔

Facebook Comments

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں